میرے بے خبر تجھے کیا خبر
میری زندگی کا ہر اک پل
تیری آرزو تیری جستجو
میری جیت تو میری ہار تو
میرے بے خبر تجھے کیا خبر
تیری زات وہ نصاب ہے
جسے پڑھنا میرا خواب ہے
جو میرے لیے سیراب ہے
میرے بے خبر
میری بات سن
میری پلکوں سے
میرے خواب چن
میری چاہتیں اور محبتیں
تیرے نام تھی تیرے نام ہیں
میرے دل کی ساری دھڑکنیں
بنا تیرے مجھ پہ محال ہیں
میرے بے خبر تجھے کیا خبر