یہ معلومات مجھے ریسکیو میں کام کرنے والے ایک آفیسر کے زریعے ملی ھیں
یاد ریکھیں ریسیکیو نمبرز پر مذاق مت کریں ، ایسے لوگ جو ریسکیو نمبرز پر مذاق کرکے حادثے کی غلط معلومات دیتے ھیں*، انکی اطلاع کے لیے عرض ھے کہ ان کے نمبرز کو نوٹ کرلیا جاتا ھے ، اور اگر وہ دوبارہ کبھی کال کریں ، اور اصل حادثے کی معلومات دیں ، جو انکے ساتھ یا انکے کسی دوست عزیز رشتہ دار کے ساتھ رونما ھوا ھو ، تو انکی کال کو اھمیت نھیں دی جاتی -


یاد رکھیں ریسکیو کا ادارہ ایک بہت اھم کام کرتا ھے ، وہ ھے انسانی جانوں کو ضائع ھونے سے بچانا۔ ان سے جھوٹ بولنے صرف ایک گناہ نھیں ھے ، بلکہ یہ آپ پر کسی جان کے ضائع ھونے کے جرم میں بھی شریک بنا سکتا ھے۔ اس لیے ایسا مذاق ایک انتہائی بے ھودہ حرکت ھے ، نہ خود ایسی حرکت کریں ، بلکہ دوستوں کو بھی ایسی پرینک کالز کرنے سے باز رکھیں۔


 



Name:  054.jpg
Views: 540
Size:  122.8 KB