Name:  1017423_10151978572984296_1270807966_n.jpg
Views: 883
Size:  41.8 KB

ریڈیو، ٹیلی ویژن اور فلم کے معروف اداکار غیور اختر طویل علالت کے بعد 79 برس کی عمر میں لاہور میں انتقال کرگئے۔

غیور اختر نے ستر کی دہائی میں ریڈیو پاکستان سے آغاز کیا اور پھر پی ٹی وی کے کئی مشہور ڈراموں میں اپنی پرفارمنس کے ذریعے ان کہانیوں کو لازوال بنا دیا۔

کامیڈی کرداروں کو اپنے منفرد انداز سے نبھانے والے غیور اختر گزشتہ تین سال سے فالج کی وجہ سے چلنے پھرنے سے قاصر تھے، اس کے باوجود وہ ریڈیو سے منسلک تھے۔

گزشتہ رات طبیعت بگڑنے پر انہیں سروسز اسپتال منتقل کیا گیا مگر وہ جانبر نہ ہوسکے۔

اسی کی دہائی کے مشہور کامیڈی ڈرامے 'سونا چاندی' کا کردار 'او ہو ہو' سب ہی کو یاد ہوگا، غیور کا یہ مخصوص انداز ڈرامے میں ان کے کردار کی پہچان بن گیا۔

مگر افسوس کہ سب کے چہروں پر مسکراہٹیں بکھیرنے والا یہ انسان آج اپنے چاہنے والوں کو غمگین کرگیا۔


 


غیور اختر کو ان کی فنی خدمات کے اعتراف میں حکومت کی جانب سے پرائیڈ آف پرفارمنس سے بھی نوازا گیا۔

سن 1970 میں شوبز سے منسلک ہوئے سونا چاندی، خواجہ اینڈ سنز، افسر بے کار خاص، فری ہٹ اور گھر آیا میرا پردیسی میں اپنے فن کا لوہا منوایا۔

اردو فلم 'ڈائریکٹ حولدار' میں بھی وہ جلوہ گر ہوئے اور اپنی پرفارمنس سے سب ہی کو متاثر کیا۔