Results 1 to 2 of 2

Thread: سنا ھے

  1. #1
    Super Moderator Array
    Join Date
    Jan 2013
    Posts
    51,844
    Country: Pakistan
    Rep Power
    56

    سنا ھے

    سنا ھے لوگ اُسے آنكھ بھر كے دیكھتے ھیں
    تو اس کے شہر میں کچھ دن ٹھہر کے دیکھتے ھیں

    سنا ھے ربط ھے اس کو خراب حالوں سے
    سو اپنے آپ کو برباد کر کے دیکھتے ھیں


     


    سنا ھے درد کی گاہک ھے چشمِ ناز اس کی
    سو ھم بھی اس کی گلی سے گزر کے دیکھتے ھیں

    سنا ھے اس کو بھی ہے شعر و شاعری سے شغف
    تو ھم بھی معجزے اپنے ھنر کے دیکھتے ھیں

    سنا ھے بولےتو باتوں سے پھول جھڑتے ھیں
    یہ بات ھے تو چلو بات کر کے دیکھتے ھیں

    سنا ھے رات اسے چاند تکتا رھتا ھے
    ستارے بام فلک سے اتر کے دیکھتے ھیں

    سنا ہے دن کو اسے تتلیاں ستاتی ہیں
    سنا ہے رات کو جگنو ٹھہر کے دیکھتےہیں

    سنا ھے حشر ہیں*اس کی غزال سی آنکھیں
    سنا ھے اس کو ھرن دشت بھر کے دیکھتے ہیں

    سنا ھے رات سے بڑھ کر ہیں*کاکلیں اس کی
    سنا ھے شام کو سائے گزر کے دیکھتے ھیں

    سنا ھے اس کی سیہ چشمگی قیامت ھے
    سو اس کو سرمہ فروش آہ بھر کے دیکھتے ھیں

    سنا ہےجب سے حمائل ہے اس کی گردن میں
    مزاج اور ہی لعل و گوہر کے دیکھتے ہیں

    سنا ھے اس کے بدن کی تراش ایسی ھے
    کہ پھول اپنی قبائیں کتر کے دیکھتے ھیں

    سنا ھے اس کے لبوں سے گلاب جلتے ھیں
    سو ھم بہار پہ الزام دھر کے دیکھتے ھیں

    سنا ھے آئینہ تمثال ھے جبیں اس کی
    جو سادہ دل ہیں*اسے بن سنور کے دیکھتے ھیں

    بس اک نگاہ سے لٹتا ھے قافلہ دل کا
    سو راہ روانِ تمنا بھی ڈر کے دیکھتے ھیں

    وہ سرو قد ہے مگر بے گل مراد نہیں
    کہ اس شجر پہ شگوفے ثمر کے دیکھتے ھیں

    بس اك نگاہ سے لوٹا ہے قافلہ دل كا
    سو رہ روان تمنا بھی ڈر كے دیكھتے ھیں

    سنا ھے اس کے شبستاں سے متصل ھے بہشت
    مکیں* ادھر کے بھی جلوے اِدھر کے دیکھتے ھیں

    کسے نصیب کے بے پیرھن اسے دیکھے
    کبھی کبھی در و دیوار گھر کے دیکھتے ھیں

    رکے تو گردشیں اس کا طواف کرتی ھیں
    چلے تو اس کو زمانے ٹھہر کے دیکھتے ھیں

    کہانیاں ھی سہی ، سب مبالغے ھی سہی
    اگر وہ خواب ھے تعبیر کر کے دیکھتے ھیں

    اب اس کے شہر میں*ٹھہریں کہ کوچ کر جائیں
    فراز آؤ ستارے سفر کے دیکھتے ھیں**.

    "احمد فراز"



    Last edited by Tahir Bati; 01-28-2014 at 12:27 PM.



  2. #2
    Member Array rabia iqbal rabi's Avatar
    Join Date
    May 2012
    Location
    Karachi, Pakistan, Pakistan
    Posts
    2,365
    Country: Pakistan
    Rep Power
    8
    بس اک نگاہ سے لٹتا ھے قافلہ دل کا
    سو راہ روانِ تمنا بھی ڈر کے دیکھتے ھیں
    حسین ذوق انتخاب





Thread Information

Users Browsing this Thread

There are currently 1 users browsing this thread. (0 members and 1 guests)







Similar Threads

  1. کیسے چھوڑیں اسے تنہائی پر
    By carefree in forum Shair-o-Shairi
    Replies: 1
    Last Post: 12-29-2013, 05:42 AM
  2. Replies: 1
    Last Post: 12-19-2013, 10:47 PM
  3. Replies: 0
    Last Post: 11-29-2013, 05:02 PM
  4. سانس لینا بھی کیسی عادت ہے
    By carefree in forum Shair-o-Shairi
    Replies: 1
    Last Post: 04-07-2013, 12:08 PM
  5. Replies: 0
    Last Post: 12-28-2012, 04:07 PM

Tags for this Thread

Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •  



Get Daily Forum Updates

Get Most Amazing E-mails Daily
Full of amazing emails daily in your inbox
Join Nidokidos E-mail Magazine
Join Nidokidos Official Page on Facebook


Like us on Facebook | Get Website Updates | Get our E-Magazine