Results 1 to 2 of 2

Thread: غاصب کی تنی رات کو ہم چاک کریں گے

  1. #1
    Member Array carefree's Avatar
    Join Date
    Feb 2012
    Posts
    3,504
    Country: Canada
    Rep Power
    10

    غاصب کی تنی رات کو ہم چاک کریں گے

    بھنور لپیٹ کے پاؤں، سفر میں رکھا ھے
    سوائے ذات کے سب کو نظر میں رکھا ھے

    غاصب کی تنی رات کو ہم چاک کریں گے
    چھُپا کے زہر کا خنجر، جگر میں رکھا ھے

    ہماری نسلیں وہ جھیلیں گی، ہم جو بوئیں گے
    اِس ایک فکر نے مجھ کو، اثر میں رکھا ھے

    جنوں کو تھام رہی ھے، ہر ایک محرومی
    نشہ عجیب سا اوجھل سحر میں رکھا ھے

    فرعونِ وقت کو اِک دن ڈبو کے چھوڑیں گے
    قہر سا لاوہ، سکوتِ لہر میں رکھا ھے



     

  2. #2
    Administrator Array admin's Avatar
    Join Date
    Nov 2006
    Location
    Khanewal
    Posts
    9,600
    Country: Pakistan
    Rep Power
    10
    wah , kia kehnay


    ہماری نسلیں وہ جھیلیں گی، ہم جو بوئیں گے
    اِس ایک فکر نے مجھ کو، اثر میں رکھا ھے

Thread Information

Users Browsing this Thread

There are currently 1 users browsing this thread. (0 members and 1 guests)







Posting Permissions

  • You may not post new threads
  • You may not post replies
  • You may not post attachments
  • You may not edit your posts
  •  

Connect your smart phone with microphone